بہاولپور (بی بی سی ) بہاول پور صوبہ تحریک کی رہنما ؤں مسز شمیم عباسی، سردار بیگم اور دیگر نے کہا ہے کہ ارباب اختیار کو احساس دلا نے عوام کو بیدار کرنے کیلئے بہاول پور کی خواتین اپریل1970ء کی تحریک کی طرح ایک بار پھر صوبہ تحریک کو پر وان چڑھا نے میں فاتحانہ اور جرات مندانہ کردار ادا کررہی ہیں۔ سا بقہ تحریک میں بیگم طاہرہ مسعود،بیگم سردار محمود خاں خاکوانی، بیگم محمودہ عباسی،بیگم اللہ بچایا، بیگم فیض لا شاری، ماجدہ ملک، بیگم قاسم شاہ، بیگم اکبر شاہ، بیگم کریم ہاشمی، بیگم عبدالغنی، بیگم شہناز گل، بیگم رئیس عبدالرحمن، بیگم عبدالنبی کانجو، جمیلہ الطاف اور دیگرنے بہاول پور صوبہ تحریک میں امتیازی کردار ادا کرتے ہوئے اپنی خاندانی روایات کو توڑ کر تحریک پاکستان کی یاد تازہ کردی۔ ان خیالات کا اظہار متحدہ تحریک بحالی صوبہ بہاول پور شعبہ خو اتین کی مرکزی صدر مسز شمیم عباسی نے سینئر نائب صدر سردار بیگم کی رہائش گاہ پر تحریک کے شہیدوں اور اسیروں کیلئے منعقدہ دعائیہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ تخت اسلام آباد اور پنجاب کے سیاسی گدی نشینوں نے صوبہ بحالی کے حوالے سے بہاول پور کے عوام کو سخت مایوس کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جنوبی پنجاب صوبہ محاذ کے باغی سیاستدانوں نے دو صو بوں کی قرارداد کو چھوڑ کر جنوبی پنجاب کا نعرہ لگا کر اپنے مستقبل پر خود کلہاڑی مار رہے ہیں۔شمائلہ جی جان، مسز ناصرہ چوہدری، مسز گلناز بیگم نے کہا کہ بہاولپور صوبہ کی جاری موجودہ تحریک میں محترمہ عا بدہ درانی ، آسیہ کامل ، سمیرا ملک ایڈووکیٹ، رابعہ ملک، شہلا احسان ملک اور دیگر مقامی خو اتین تحریک کو پروان اور آگے بڑھا نے میں سنجیدہ کردار ادا کررہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ صوبہ بحالی سے پہلے کوئی دوسرا صوبہ ہر گز نہیں بن سکتا۔ اس موقع پر انابیہ اکرام، ہادیہ اجمل، دعا خان، علینہ اسلام،طوبیٰ عباسی،عروبہ عباسی،شائستہ بلوچ،نبیلہ بلوچ، تنزیلہ بلوچ ،صابرہ بیگم، نادرہ بیگم کے علاوہ دیگر نے بھی شرکت کی۔آخر میں دعااور لنگر تقسیم کیا گیا۔

This Post Has Been Viewed 2 Times