ملتان( صفدرعلی بخاری ) چئیرمین مستقبل پاکستان انجینئر ندیم ممتاز قریشی نے کہا کہ کمسن بچی زینب سے انسانیت سوز سلوک زیادتی کے بعد قتل کرنے والے قاتل کو عبرتناک سزا دی جائے،پولیس کی مظاہرین پر سیدھی فائرنگ بھی ظلم کے مترادف ہے۔ملزم دندناتے پھر رہے ہیں ۔عام آپ آدمی کو انصاف نہیں مل رہا۔چیف جسٹس سپریم کوٹ کمسن بچی کے وحشیانہ قتل کی تحقیقات اپنی نگرانی میں کروائیں اور فوج بھی مکمل مدد کرے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے میڈیا نمائندگان سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ قصور کی ننھی زینب کے ساتھ جو ظلم ہوا ہے اس پر پوری پاکستانی قوم کے سا تھ ساتھ پوری دنیا میں لوگ افسوس کر رہے ہیں ۔پوری قوم انصاف کی بھیک مانگ رہی ہے ۔پولیس لوگوں کی حفاظت کے بجائے سیدھی فائرنگ کر رہی ہے ۔ انجینئر ندیم ممتاز قریشی نے حکمرانوں سے سوال کیا کہ ایسا کون سا قانون ہے جو پولیس کو عوام پر فائرنگ کا حکم دیتا ہے؟انہوں نے کہا کہ ملک بھر میں لا اینڈ آڈر کی صورتحال تشویش ناک ہے ۔لوگ انصاف نہ ملنے کی وجہ سے خودکشیاں کر رہے ہیں ۔عوام حکومتی کارکردگی سے مایوس ہو چکی ہے۔فرضی انکوائریاں ،کمیٹیاں قائم ہوتی ہیں۔آج تک کسی بھی کمیشن رپورٹ کے مطابق ملزمان کو سزا نہیں دی گئی۔قصور واقعہ درندگی کی بدترین مثال ہے ۔ملزمان کو نشان عبرت بنایا جائے۔ انجینئر ندیم ممتاز قریشی نے کہا کہ ملک میں قیادت کا فقدان ہے۔انہوں نے کہا ملک بھر میں کرائمز کی تعداد بہت زیادہ ہے۔عام آدمی قانون کا ساتھ دینے کو تیار ہے پر پولیس رشوت کے بگیر جائز کام بھی نہیں کرتی۔ انجینئر ندیم ممتاز قریشی نے کہا کہ ہماری سیاسی جماعت مظلوموں کے ساتھ ہے اور انصاف نہ ملنے تک آواز اُٹھاتی رہے گی۔

This Post Has Been Viewed 5 Times