قصور(بی بی سی) امیرجماعت اسلامی سراج الحق نے ڈی پی اوقصورکی پھانسی دینے کامطالبہ کر دیا،قصور میں مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے سراج الحق نے کہا کہ صرف ملزم نہیں،ڈی پی اوکوبھی پھانسی دی جائے،انہوں نے شہبازشریف کی رات کے اندھیرے میں تعزیت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعلیٰ رات کے اندھیرے میں زینب کے گھر پہنچے تھے،رات کے اندھیرے میں توچھاپے مارے جاتے ہیں،وزیراعلیٰ کودن کی روشنی میں آکروضاحت دینی چاہئے تھی۔ امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ حکمرانوں کومزیداقتدارمیں رہنے کاحق نہیں، فوری طور پر مستعفی ہو جائیں،انہوں نے کہا کہ زینب کے واقعہ پر میری طرح 22 کروڑ پاکستانیوں کو نیند نہیں آئی ،ہر پاکستانی اپنی بچی کی طرف سے فکر مند ہے، میں عوام سے اپیل کرتا ہوں کہ ظلم کے اس نظام کو زندہ درگور کرنے میں میرا ساتھ دیں۔ امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ پنجاب پولیس والوں تمہیں شرم آنی چاہئے جب زینب کی لاش کو برآمدکیا گیا تو ان کے گھر والوں سے کہا گیا کہ پولیس والوں کو 10ہزاروپے انعام دے دو کیونکہ ان نے تمہاری بچی کی لاش کو برآمد کیا ہے،حکمرانوں کو اقتدار میں نہیں رہنا چاہئے انہوں نے قصور کو پنجاب حکومت نے ظلم و ستم کا مرکز بنادیا،سراج الحق کا کہناتھا کہ قاتلوں کے پھانسی کے پھندے تک نہ پہنچا دیں آرام سے نہیں بیٹھیں گے ۔

This Post Has Been Viewed 4 Times