شہدادکوٹ( جھانگیر شیخ) شہدادکوٹ میں بھتہ خور وں اور قبضہ مافیا کے6 مسلح غنڈو ں نے پریس کلب میں سینئر صحافی سید صادق علی شاہ پر قاتلانہ حملہ کردیا حملہ آوروں نے صحافی کو شدید تشدد کا نشانہ بنایا اور پسٹل کے بٹ مار کر اسے شدید زخمی کردیا اورفائرنگ کرتے ہوئے کار میں فرار ہوگئے۔ حملہ آوروں کی فائرنگ سے علاقے میں خوف و حراس پھیل گیا۔ حملے میں زخمی ہونے والے سینئر صحافی سید صادق علی شاہ کو سول اسپتال شہدادکوٹ داخل کردیا گیاہے۔ واقعہ کے خلاف شہر کے صحافیوں اور سیاسی و سماجی تنظیموں کی جانب سے کوٹو موٹو چوک پر احتجاجی مظاہرہ کرکے دو گھنٹے تک دھرنا دیا گیا جس کے باعث ٹریفک معطل ہوگئی مظاہرین نے غنڈا گردی کے خلاف شدید نعرے بازی کی گئی۔اس موقع پر صحافیوں جاوید اختر کمبوہ، جلیل جروار،عدنان بھٹی، غنی مجاہد، غلام علی براہوی، راجہ شیخ، حیات تونیو، شاہد اعوان، میڈم ناہید کھاوڑ اور دیگرنے وزیر اعلیٰ سندھ ، آئی جی سندھ اور ایس ایس پی قمبر شہدادکوٹ سے پرزور مطالبہ کیا کہ سینئر صحافی سید صادق علی شاہ پر قاتلانہ حملہ کرنے والے ملزمان کو فوری طور پر گرفتار کیا جائے بصورت دیگر احتجاجی تحریک شروع کی جائے گی۔ دوسری جانب واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے ایس ایس پی قمبر شہدادکوٹ شیراز نذیر عباسی نے شہدادکوٹ پہنچ کر جائے واردات کا معائنہ کرکے صحافیوں کو یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ حملہ آوروں کے خلاف مقدمہ درج کرکے فوری طور پر گرفتار کیا جائے گا جس پر صحافیوں نے احتجاج مؤخر کردیا جبکہ ایس ایس پی کی ہدایات پر اے سیکشن تھانہ کی پولیس نے سینئر صحافی سید صادق علی شاہ کی مدعیت میں6 ملزمان غلام شبیر مگسی، غلام عباس مگسی، زبیر مگسی، زیدعلی مگسی، ریاض مگسی اور شاہد مگسی کے خلاف گناہ نمبر176/2017 قلم 386-324-506/2-337A2-337A1, F1-148-149-504PPC-617ATAدہشت گردی، بھتہ خوری، ارادہ قتل ، قاتلانہ حملہ، جان سے مارنے کی دھمکیوں اور دیگر کے تحت مقدمہ درج کرکے تین ملزمان شاہد مگسی، زید علی مگسی اور زبیر مگسی کو گرفتار کرکے لاک اپ کردیا ہے اور دیگر مفرور ملزمان کے لئے چھاپے مارے جارہے ہیں۔

This Post Has Been Viewed 4 Times