کراچی (بی بی سی  ) شہر قائد کے کئی علاقوں سے میں گزشتہ روز ہونے والی بارش کا پانی اب تک نہیں نکالا جاسکا جب کہ آج بھی بارش کی پیش گوئی کی گئی ہے۔ کراچی میں گزشتہ روز کی بارش نے شہر کا حلیہ ہی بڑھادیا ہے۔ سندھ حکومت اوربلدیاتی اداروں کی سنگین نااہلیوں کا خمیازہ کراچی کے شہریوں کو بھگتنا پڑرہا ہے۔ بارشوں کے بعد اکثرعلاقے پانی میں تاحال ڈوبے ہیں، دو دن کی بارش اور پانی نکالنےکا نظام نہ ہونے سے سڑکیں تباہ ہوگئیں تاہم پاک فوج، پا ک بحریہ اورسندھ رینجرز سمیت دوسرے ادارے پانی میں پھنسے لوگوں کی مدد میں مصروف ہیں۔حکام کی جانب سے نشیبی علاقوں سے اب تک پانی نہیں نکالا جاسکا، گڈاپ ٹاؤن کے ٹیلوں اور ڈیموں کا پانی اسکیم 33 کے مختلف علاقوں میں داخل ہوگیا ہے، پانی کا ریلہ اسکیم 33 کے مختلف علاقوں سے ہوتا ہوا گلستانِ جوہرکے برساتی نالے میں گررہا ہے، علاقہ مکین خوفزدہ ہیں اورکئی نے تورات جاگ کرگزاری۔ سرجانی، نارتھ کراچی، بفرزون، سائیٹ، ناظم آباد، اورنگی کے کئی علاقوں میں بھی پانی کھڑا ہے۔دوسری جانب کئی مرکزی شاہراہوں سے پانی اترگیا ہے جبکہ کورنگی ندی اور سڑک کو ٹریفک کے لیے بند کردیا گیا۔ دونوں سڑکوں پر تین سے چارفٹ پانی ہے تاہم ٹریفک پولیس نے شہریوں سے متبادل راستہ اختیارکرنےکی اپیل کی گئی ہے۔محکمہ موسمیات کے مطابق کراچی میں آج بھی بارش کا امکان ہے، بارش برسانے والا سسٹم تاحال شہر میں موجود ہے جب کہ  سمندری ہوائیں آج بھی بند ہیں۔

This Post Has Been Viewed 21 Times