ملتان ( بی بی سی) چئرمین مستقبل پاکستان انجینئر ندیم ممتاز قریشی نے کہا کہ بجٹ 2017-18الفاظ کا ہیر پھیر ثابت ہوا ہے ،حکومت نے ریلیف کے نام پر عوام سے بھونڈا مذاق کیا ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے بجٹ 2017-18کے حوالے سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہا کہ ہرسال بجٹ کے نام پر مہنگائی کا ایک طوفان آتا ہے جو غریب اور متوسط طبقے کیلئے دکھ و تکالیف اور پریشانیوں میں اضافے کا باعث بنتا ہے ۔انہوں نے مزید کہا کہ حکمرانوں کے غربت مٹاؤ منصوبے ہمیشہ سے ہی غریب مٹاؤ منصوبے ثابت ہوئے ہیں ،سارا سال عوام کولہو کے بیل کے طرح محنت کرتے ہیں لیکن ان کے دن نہیں بدلتے ،دو وقت کی روٹی ،صاف پانی کو ترستی عوام سارا سارا دن بجلی آنے کی دعائیں مانگتے ہیں ۔انجینئر ندیم ممتاز قریشی نے کہا کہ حکومتی دعوے ہیں کہ انہوں نے ملکی ترقی اور عوام کی خوشحالی کیلئے بڑے ،بڑے پروجیکٹس مکمل کیے ہیں، اگر حقیقت میں دیکھا جائے تو آج بھی پاکستانی عوام مشقت کی چکی میں پس کر اپنے اخراجات پورے نہیں کرپارہے آخر اس کی وجوہات کیا ہیں ۔انہوں نے کہا کہ حکمران بجٹ اجلاسوں میں لمبے ،چوڑے بھاشن دینے کی بجائے ہمسایہ ممالک کے بجٹ پر ذرا کرلیں کہ وہ تعلیم و صحت اور عوامی بہبود کے منصوبوں پر بجٹ کا کتنا حصہ مختص کرتے ہیں تو ان کی آنکھیں کھل جائیں ۔انہوں نے مزید کہا کہ اگر حکمران حقیقی معنوں میں عوام دوست بجٹ بنالیں تو انہیں عوامی بجٹ کاواویلہ کرنے کی بھی ضرورت نہیں پڑے گی بلکہ قوم کی ترقی و خوشحالی خود بول کر حکمرانوں کی کارکردگی کی گواہی دے گی ۔

This Post Has Been Viewed 44 Times