news-1468942749-7734_largeلندن.. سائنسدانوں نے موبائل فون پر ایک دوسرے کو شرمناک تصاویر اور پیغامات بھیجنے والوں کے متعلق ایک انتہائی پریشان کن انکشاف کر دیا ہے۔ برطانوی اخبار ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ ”قلیل مدتی تعلق کے خواہشمند افراد فحش تصاویر، ویڈیوز اور پیغامات اس لیے بھیجتے ہیں کہ وہ چیز حاصل کر سکیں جو وہ چاہتے ہیں مگر زیادہ تر ایسے لوگ بھی فحش مواد اپنے پارٹنر کو بھیجتے ہیں جو اپنے پارٹنر سے طویل مدتی مضبوط تعلق رکھتے ہیں۔ ایسے لوگ اپنے رومانوی پارٹنر کے ساتھ جھگڑے سے بچنے کے لیے فحش مواد اسے بھیجتے ہیں۔اس کے علاوہ ایسے افراد کو اپنے پارٹنر کے متعلق یہ چیز بھی پریشان رکھتی ہے کہ وہ ان کے متعلق کیا سوچتے ہیں۔ یہ پریشانی بھی انہیں اپنے پارٹنرز کو فحش تصاویر، ویڈیوز اور پیغامات بھیجنے پر مجبور کرتی ہے۔

رپورٹ کے مطابق تحقیقاتی ٹیم کے اراکین مشعیل ڈروئین اور راکیل ڈیلیوی کا کہنا ہے کہ ”ہم نے رومانوی تعلق میں منسلک 459جوڑوں اور کچھ اکیلے لڑکے اور لڑکیوںسے اس حوالے سے سوالات کیے اور اس نتیجے پر پہنچے کہ لوگ اپنے پارٹنر کے روئیے سے ہی تعلق کی مضبوطی کا اندازہ لگاتے ہیں اور اپنے پارٹنر کے متعلق رائے قائم کرتے ہیں۔ جو شخص اپنے پارٹنر کی ضروریات کا خیال کرتا ہے اور اس کا ایک بچے کی طرح خیال رکھتا ہے، اس کا پارٹنر اتنا ہی اس کے ساتھ خود کو محفوظ تصور کرتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ لوگ اپنے پارٹنر کو اس طرح کا مواد بھیجتے ہیں تاکہ اسے یہ احساس مل سکے کہ ان کا پارٹنر ان کا خیال رکھ رہا ہے اور وہ اس کے ساتھ تعلق میں خود کو محفوظ تصور کریں۔ہماری اس تحقیق میں ثابت ہوا ہے کہ جو شخص بھی رومانوی تعلق میں منسلک ہو وہ ممکنہ طور پر اپنے پارٹنر کو فحش موادبھیجتا ہے۔ جس شخص کا کسی سے رومانوی تعلق نہ ہو وہ ایسا مواد بھی کسی کو نہیں بھیجتا۔“

This Post Has Been Viewed 284 Times